رسائی کے لنکس

کرونا ویکسین لگوانے سے انکار پر امریکی فضائیہ کے 27 اہل کار برخاست


امریکہ کی فضائیہ کے 27 اہل کاروں کو کرونا ویکسین لگوانے سے انکار پر ملازمتوں سے برخاست کر دیا گیا ہے۔ حکام کے مطابق کرونا ویکسین لگوانے کے حکم سے انکار کرنے والے یہ پہلے سروس ممبرز ہیں جنہیں ملازمتوں سے فارغ کیا گیا ہے۔

امریکی ایئر فورس نے اپنے تمام افسران اور عملے کو ہدایت کی تھی کہ وہ دو نومبر تک کرونا ویکسین لگوا لیں۔ البتہ ہزاروں اہل کاروں نے یا تو ویکسین لگوانے سے انکار کیا یا مختلف وجوہات کی بنا پر استثنٰی کی درخواست کی۔

ایئر فورس کی ترجمان این اسٹیفنک نے پیر کو ذرائع ابلاغ کو بتایا کہ یہ کرونا ویکسین سے متعلق معاملات کے باعث ملازمتوں سے فارغ ہونے والے اولین اہل کار ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ ملازمتوں سے برخاست ہونے والے زیادہ تر اہل کار نوجوان اور نچلے رینکس کے افسران ہیں۔

اسٹیفنک نے مزید کہا کہ ویکسین لگوانے سے انکار کرنے والے افسران اور اہل کاروں کو باعزت طریقے سے رُخصت کرنے کے لیے امریکی کانگریس کے ذریعے قانون سازی پر بھی کام ہو رہا ہے۔

امریکی محکمہ دفاع (پینٹاگان) نے رواں برس کے آغاز پر تمام سروس ممبرز کے لیے ویکسین لازمی قرار دے دی تھی جس کے لیے مسلح افواج کی جانب سے مختلف ڈیڈ لائنز مقرر کی گئی تھیں۔

'کرونا کی نئی قسم سب سے پہلے بچوں اور صحت مند افراد پر اثر انداز ہوئی'
please wait

No media source currently available

0:00 0:05:35 0:00

وزیرِ دفاع لائیڈ آسٹن نے ایک بیان میں کہا تھا کہ سروسز میں صحت اور نیشنل سیکیورٹی کی صورت میں ردِ عمل دینے کی صلاحیت کو برقرار رکھنے کے لیے ویکسین بہت ضروری ہے۔

جن 27 ایئر فورس ملازمین کو برخاست کیا گیا ہے ان میں سے کسی نے بھی طبی یا مذہبی وجوہات یا دیگر عوامل کی بنا پر ویکسی نیشن سے استثنٰی طلب نہیں کی تھی۔

ایئر فورس کی ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ فی الحال صرف ایئر فورس ہی وہ واحد سروس ہے جس نے ویکسی نیشن سے انکار پر اہل کاروں کو ملازمتوں سے فارغ کیا ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ احکامات نہ ماننے پر سروس ممبرز کو برخاست کرنا کوئی نئی بات نہیں ہے۔ رواں برس ایئر فورس کے 1800 ملازمین کو مختلف انتظامی وجوہات یا حکم ماننے سے انکار پر فارغ کیا گیا۔

ایئر فورس کی جانب سے فراہم کیے گئے تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق لگ بھگ ایک ہزار اہل کاروں نے کرونا ویکسین لگوانے سے مکمل انکار جب کہ 4700 نے مذہبی استثنٰی طلب کی تھی۔

امریکی وزیرِ دفاع لائیڈ آسٹن (فائل فوٹو)
امریکی وزیرِ دفاع لائیڈ آسٹن (فائل فوٹو)

حکام کے مطابق گزشتہ ہفتے تک ایئر فورس کے 97 فی صد ملازمین نے کرونا ویکسین کی کم سے کم ایک ڈوز لگوا لی تھی۔

دوسری جانب امریکی فوج نے ڈیوٹی پر موجود اہل کاروں کو بدھ تک جب کہ نیشنل گارڈز اور ریزرو عملے کو آئندہ برس جون تک ویکسی نیشن کروانے کی مہلت دی ہے۔

امریکی محکمۂ دفاع پینٹاگان کے مطابق 10 دسمبر تک مسلح افواج کے 96.4 فی صد اہل کاروں نے ویکسین کی کم سے کم ایک ڈوز لگوا لی ہے۔ البتہ نیشنل گارڈز اور ریزرو فوج میں یہ شرح اب بھی 74 فی صد ہے۔

امریکہ میں صحتِ عامہ کے نگران ادارے سینٹرز فار ڈیزیز کنٹرول (سی ڈی سی) کے مطابق ملک میں 18 برس یا اس سے زائد کے 72 فی صد شہریوں نے کرونا ویکسین کی کم سے کم ایک ڈوز لگوا لی ہے۔

فیس بک فورم

XS
SM
MD
LG